Tuesday, May 24, 2011

کیا قرآن پچھلی کتابوں سے کاپی شدہ انسانی کلام ہے ؟

ہمارے ایک درینہ دوست نے وہ تحاریر جو کہ آج کل لوگوں کے زہنوں کو منتشر کرنے کے لیے لکھی جا رہی ہیں ، کہ جواب میں کچھ تحقیق کری ہیں ان شاءاللہ ان کی یہ تحریر بہت فائدہ دے گی کچھ اقتباسات یہاں لکھ دیتا ہوں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کیا قرآن پچھلی کتابوں سے کاپی شدہ انسانی کلام ہے ؟

یہ بہتان سب سے پہلے مکہ کے کفار و مشرکین نے قرآن پر لگایا تھا، اللہ نے قرآن ہی میں انکے ان تمام وساوس کا جواب دے دیا تھا، پھر بھی بعد میں یہود ونصاری نے باوجود اپنی کتابوں میں ہی اس کتاب کے سچی ہونے کی گواہیوں کے’ محض اپنے عناد و تکبر کی وجہ سے اسے دوہرایا اور آج بھی انکے پیروکار جان بوجھ کر یا جہالت میں ان وساوس کو کاپی کرتے آرہے ہیں۔

باقی کی تحریر اس بلاگ پر پڑھی جاسکتی ہے اور تبصرے بھی اس بلاگ پر کئے جا سکتے ہیں


جزاک اللہ خیر

3 comments:

افتخار اجمل بھوپال said...

جزاک اللہ خيراٌ

tania rehman said...

جزاک اللہ خیر۔

TariqRaheel said...

اللہ ہی ہدایت دینے والا ہے وہ بھی ان کو کہ جو ہدایت طلب کرتے ہیں